مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

فتووں کی کتابیں » توضیح المسائل جامع

گیارہویں شرط: وضو کے اعضا تک پانی پہونچنے میں کوئی رکاوٹ نہ ہو ← → نویں شرط: ممکنہ صورت میں انسان وضو کے افعال کو خود انجام دے

دسویں شرط: اس کے لیے پانی کا استعمال مضر نہ ہو

مسئلہ 318: اگر کسی کو خوف ہو کہ اگر وضو کرے گا تو بیمار ہو جائے گایا اس کی بیماری طولانی یا شدید ہو جائے گی یا اس کی بیماری کا علاج سختی سے ہوگا تو اسے وضو نہیں کرنا چاہیے بلكہ تیمم کرنا ضروری ہے لیکن اگر کوئی طریقہ ہو جو ضرر کو روک سکتا ہو مثلاً گرم پانی سے وضو کرے تو ایسا کرنا ضروری ہے۔

مسئلہ 319: اگر چہرہ اور ہاتھوں کو اتنے کم پانی سے دھونا جس سے وضو صحیح ہو ضرر نہ رکھتا ہو اور اس سے زیادہ پانی ضرر رکھتا ہو تو اسی کم مقدار سے وضو کرنا ضروری ہے۔

مسئلہ 320: اگر مکلف اس یقین کے ساتھ کہ پانی وضو کرنے کے لیے مضر نہیں ہے تو وضو کرے اور وضو کے بعد سمجھے کہ پانی اس کے لیے اگر مضر تھا تو اس کا وضو باطل ہے اور اگر اس یقین کے ساتھ کہ پانی اس کے لیے مضر تھا وضو کرے اور بعد میں متوجہ ہو کہ پانی مضر نہیں تھا تو اس کا وضو صحیح ہے لیکن شرط یہ ہے کہ اس سے قصد قربت حاصل ہوئی ہو۔

گیارہویں شرط: وضو کے اعضا تک پانی پہونچنے میں کوئی رکاوٹ نہ ہو ← → نویں شرط: ممکنہ صورت میں انسان وضو کے افعال کو خود انجام دے
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français