مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

فتووں کی کتابیں » توضیح المسائل جامع

چوتھا مقدمہ: نماز گزار کے بدن اور لباس کا پاک ہونا ← → اوقات نماز کے دوسرے احکام

دوسرا مقدمہ: قبلہ کی رعایت

مسئلہ 917: خانہٴ کعبہ شرفھا اللہ تعالیٰ جو مکہٴ معظمہ میں ہے قبلہ شمار ہوتا ہے اور انسان کے لیے ضروری ہے کہ اس کے روبرو نماز پڑھے اور دوسرے امور کے لیے بھی یہی حکم ہے کہ قبلہ کے رو بروانجام دیں جیسے جانوروں کا ذبح کرنا۔

مسئلہ 918: قبلہ کی جہت معین کرنے کے لیے انسان پر لازم ہے کہ اگر خانہٴ کعبہ سے اتنے فاصلے پر ہے کہ دیکھ کر قبلہ کی جہت کو دقیق طور پر تشخیص دے سکتا ہے جیسے وہ شخص جو مسجد الحرام کے صحن میں موجود ہے اور خانہٴ کعبہ کو دیکھ رہا ہے اسے چاہیے قبلہ کی جہت کی دقیق طور پر رعایت کرے اور جان بوجھ کر نماز کی حالت میں قبلہ سے منحرف ہونا کم مقدار میں تشخیص ہی کیوں نہ ہو جائز نہیں ہے، لیکن اگر انسان ایسی جگہ پر موجود ہو کہ قبلہ کی جہت کو دقیق طور پر دیکھ کر تشخیص دینا ممکن نہ ہو جیسے وہ شخص جو کعبہ سے دوری پر ہے اگر اس طرح کھڑا ہو کہ عرفاً کہیں قبلہ رخ نماز پڑھ رہا ہے یعنی قبلہ کی جہتِ عرفی کی رعایت کرے کافی ہے اور ضروری نہیں ہے کہ آلات اور وسائل کی مدد سے جیسے GPS یا تحقیق اور سوال کے ذریعے حقیقی جہتِ قبلہ کو سمجھے لیکن اگر تحقیق کرے اور آگاہ ہو جائے کہ حقیقی قبلہ چند درجہ دائیں یا بائیں طرف منحرف ہے مثلاً آگاہ ہو جائے کہ حقیقی قبلہ (15) درجہ دائیں طرف منحرف ہے تو اس صورت میں بالکل سیدھے نماز نہیں پڑھ سکتا گرچہ عرف میں سیدھے کھڑے ہونے کو قبلہ رخ ہونا شمار کیا جائے۔

مسئلہ 919: جو شخص نماز واجب کھڑے ہو کر پڑھتا ہے ضروری ہے کہ اس کا سینہ اور پیٹ قبلہ رخ ہو بلکہ اس کا چہرہ بھی قبلہ سے زیادہ منحرف نہیں ہونا چاہیے اور احتیاط مستحب ہے کہ اس کے پیر کی انگلیاں بھی قبلہ رخ ہوں اور اس طرح جو شخص بیٹھ کر نماز پڑھ رہا ہے ضروری ہے کہ نماز کے وقت اس کا سینہ اور پیٹ قبلہ رخ ہو بلکہ اس کا چہرہ بھی قبلہ سے زیادہ منحرف نہیں ہونا چاہیے۔

مسئلہ 920: جو شخص بیٹھ کر نماز نہیں پڑھ سکتا ضروری ہے کہ نماز کی حالت میں پہلو کے بل اس طرح لیٹے کہ اس کے بدن کے سامنے کا حصہ قبلہ رخ ہو اور جب تک دائیں پہلو کے بل لیٹنا ممکن ہے احتیاط لازم کی بنا پر بائیں پہلو کے بل نہ لیٹے اور اگر یہ دونوں صورتیں ممکن نہ ہوں تو پیٹھ کے بل اس طرح لیٹے کہ اس کے پیر کے تلوے قبلہ کی طرف ہوں۔

مسئلہ 921: نماز احتیاط اور بھولے ہوئےسجدہ کوقبلہ رُخ بجالانا ضروری ہے اور احتیاط مستحب کی بنا پر سجدہٴ سہو بھی قبلہ رُخ بجالائے۔

مسئلہ922: جو شخص نماز پڑھنا چاہے ضروری ہے کہ قبلہ کی سمت کو معین کرنے کے لیے کوشش کرے تاکہ یقین حاصل ہو جائے کہ قبلہ کس طرف ہے ، یا وہ چیز جو یقین کے حکم میں ہے اُس کے لیے حاصل ہو جیسے دو عادل کی گواہی جو اپنی حس کی بنیاد پر گواہی دے رہے ہوں اور اس بنیاد پر قبلہ کی سمت کو تشخیص دے اور اسی طرح وہ اطمینان جو معقول طریقے سے حاصل ہوا ہو جیسے قابلِ اطمینان شخص کا خبر دینا۔ کافی ہے بلکہ قابلِ اطمینان شخص کا قول جو قبلہ کے تشخیص دینے میں مہارت رکھتا ہو حجت ہے گرچہ باعث گمان یا اطمینان نہ ہو۔ اور اگر ان طریقوں سے قبلہ کی سمت کو معین نہ کر سکے تو اس اطمینان پر جو مسلمانوں کی مسجد کے محراب یا مؤمنین کی قبروں یا دوسرے معقول طریقے سے حاصل ہوتا ہے عمل کرے یہاں تک کہ اگر کسی فاسق یا کافر کے کہنے پر جو علمی قواعد کی بنیاد پر قبلہ کو پہچانتا ہے قبلہ کا گمان حاصل ہو جائے تو کافی ہے۔

مسئلہ 923: جو شخص (کسی سمت) قبلہ کا گمان رکھتا ہے اگر اس سے قوی گمان پیدا کر سکتا ہے تو ضعیف گمان پر عمل نہیں کر سکتا مثلاً اگر مہمان میزبان کے کہنے پر یا مسافر ہوٹل کے انچارج کے کہنے پر قبلہ کا گمان حاصل کرے لیکن کسی اور طریقے سے جیسے قبلہ نما سے اور قوی گمان حاصل کر سکتا ہو تو ان کا قول اس کے لیے حجت نہیں ہے اور اس پر عمل نہیں کر سکتا ۔

مسئلہ 924: اگر قبلہ کو معین کرنے کے لیے کوئی ذریعہ نہ ہو یا کوشش کرنے کے باوجود اس کا گمان کسی طرف نہ جا رہا ہو تو کسی ایک طرف جدھر قبلہ کا احتمال دے رہا ہو نماز پڑھنا کافی ہے ، اور احتیاط مستحب یہ ہے کہ اگر نماز کا وقت وسیع ہو تو چاروں طرف نماز پڑھے اور اگر وقت کم ہو تو جتنی طرف کے لیے وقت ہو اتنی طرف نماز پڑھے۔

مسئلہ 925: اگر یقین یا وہ کیفیت جو یقین کے حکم میں ہے یا گمان حاصل ہو جائے کہ قبلہ دو سمت میں سے کسی ایک سمت میں ہے تو دونوں سمت نماز پڑھے ۔

مسئلہ 926: جو شخص کسی سمت میں نماز پڑھنا چاہتا ہے اگر دو نماز پڑھنا چاہے جیسے نماز ظہر اور عصر کہ جسے ترتیب سے پڑھنا ضروری ہے تو پہلے نماز ظہر کو چند سمت میں پڑھ لے پھر نماز عصر شروع کرے۔

مسئلہ 927: جو شخص قبلہ کے بارے میں یقین یا وہ کیفیت جو یقین کے حکم میں ہے حاصل نہ کر سکے اگر نماز کے علاوہ ایسا کام جس میں قبلہ کی سمت ہونا ضروری ہے انجام دینا چاہے مثلاً کسی جانور کو ذبح کرنا چاہتا ہو تو لازم ہے کہ گمان پر عمل کرے اور اگر گمان بھی ممکن نہیں ہے تو جس طرف بھی انجام دے صحیح ہے۔

مسئلہ 928: احتیاط واجب یہ ہے کہ خانہٴ کعبہ کے اندر یا اس کی چھت پر اختیار کی حالت میں نماز نہ پڑھیں،لیکن مجبوری اور اضطرار کی حالت میں حرج نہیں رکھتا اور ہر صورت میں اگر خانہٴ کعبہ کی چھت پر نماز پڑھ رہا ہے لازم ہے کہ تمام حالات میں خانہٴ کعبہ کی کچھ فضا اس کے سامنے ہو اور کھڑا ہو کر نماز پڑھے۔

تیسرا مقدمہ: حدث سے پاک ہونا

ضروری ہے کہ نماز واجب اور مستحب میں سے ہر ایک وضو یا غسل یا تیمم (جو بھی انسان کا وظیفہ ہے) کے ساتھ انجام دے اور اس کے علاوہ نماز باطل ہے، اور تینوں طہارتوں (وضو، غسل ، تیمم) میں سے ہر ایک کی وضاحت گذشتہ فصلوں میں کی جا چکی ہے۔

چوتھا مقدمہ: نماز گزار کے بدن اور لباس کا پاک ہونا ← → اوقات نماز کے دوسرے احکام
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français