مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

سوال و جواب » حیض

۱۱ سوال: اگر شوہر اور بیوی ہم بستری کے بعد متوجہ ہوں کہ وہ حائضہ ہے تو کیا حکم ہے؟
جواب: کیونکہ جاہل تھے گناہ گار نہیں ہیں، عورت پاک ہونے کے بعد حیض اور جنابت کے لیے ایک غسل کرے گی۔
۱۲ سوال: حائضہ سے ہم بستری کا کیا حکم ہے؟
جواب: حرام ہے۔
۱۳ سوال: میری ماہانہ عادت منظم نہیں ہے اکثر آگے پیچھے ہوتی رہتی ہے کبھی کبھی ماہواری شروع ہونے سے ایک ھفتہ پہلے خون کے دھبے دیکھتی ہوں اس کے بعد خون روز بروز بڑھتا جاتا ہے اور دس دن سے بھی بڑھ جاتا ہے۔ ان صورتوں میں میرا وظیفہ کیا ہے؟
جواب: جب سے لگاتار خون آنے لگے وہ حیض میں شمار ہوگا، اگر دس دن سے بڑھ جائے، سب کالا و لال ہو اور رشتہ دار عورتوں ( ماں، بہن، خالہ، پھوپھی، اور ان کی بیٹیاں) کی عادتیں معلوم نہ ہوں تو سات دن کو حیض اور باقی کو استحاضہ قرار دے گی۔
۱۴ سوال: عورتوں کے لباس دھونے کے بعد اس پر باقی رہ جانے والے پیلے دھبہ کیا نجس ہیں؟ اور وہ دھبے جو حیض کے بعد باقی رہ جاتے ہیں ان کا کیا حکم ہے؟
جواب: اگر صرف رنگ ہو اس میں عین خون نہ ہو تو وہ پاک ہے۔
۱۵ سوال: حیض کی حالت میں میہندی لگانے کا کیا حکم ہے؟
جواب: مکروہات میں سے شمار کیا گیا ہے۔
۱۶ سوال: کیا حیض کے دنوں میں حمام جایا جا سکتا ہے؟
جواب: کوئی حرج نہیں ہے۔
۱۷ سوال: حائضہ عورت امام رضا علیہ السلام کی ضریح سے کس قدر نزدیک ہو سکتی ہے؟
جواب: ضریح کے آس پاس کے شبستانوں میں جانے میں کوئی حرج نہیں ہے، احتیاط واجب کی بناء پر ضریح والے حصہ سے دور رہنا چاہیے۔
۱۸ سوال: میری بیٹی بارہ سال کی ہے اب اس کی ماہواری شروع ہوئی ہے لیکن خون مسلسل آ رہا ہے اور چونکہ وہ مدرسہ جاتی ہے اور اس کی عمر کم ہے، ہر نماز کے لیے غسل نہیں کر سکتی، ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ شروع میں ایسا ہوتا ہے۔ اس کی نماز کا کیا حکم ہے؟
جواب: اگر وہ خون دس روز سے زیادہ نہ آئے تو حیض ہے، اگر اس سے زیادہ ہو اور ایک جیسا ہو اور اس کی ہم سن رشتہ دار لڑکیوں کی مقدار میں ہو تو وہ مقدار حیض ہے، بقیہ استحاضہ ہے اور اگر ایک جیسا نہ ہو تو جن میں حیض کی صفات ہوں وہ حیض اور بقیہ استحاضہ ہے اور اگر رشتہ دار لڑکیوں کی عادتیں الگ الگ ہوں تو سات دن حساب کر سکتی ہے اور اگر استحاضہ میں خون کم ہو اتنا کہ روئی نہیں ڈوبتی ہو تو غسل ضروری نہیں ہے وضو کافی ہے لیکن ہر نماز کے لیے وضو کرنا ضروری ہے اور اگر روئی ڈوب جاتی ہے مگر خون اس سے باہر نہیں آتا تو ہر نماز کے لیے دن کا ایک غسل کافی ہے احتیاط واجب کی بناء پر لازم ہے کہ ہر نماز کے لیے وضو بھی کرے اور اگر خون سے روئی ڈوب جائے تو صبح، ظہرین اور مغربین کے لیے الگ الگ غسل واجب ہے۔
۱۹ سوال: حائضہ کے لیے سورہ فصلت اور سجدہ والی آیتیں پڑھنے کا کیا حکم ہے؟
جواب: سورہ پڑھنے میں کوئی حرج نہیں ہے صرف سجدہ والی آیت نہیں پڑھ سکتی۔
۲۰ سوال: حج کے موسم میں بعض خواتین ماہانہ عادت کو آگے بڑھانے کے لیے
دوائیاں کھاتی ہیں پھر بھی اپنی عادت کے ایام میں بطور منقطع خون دیکھتیں ہیں کیا وہ حیض ہے؟
جواب: اگر تین دن لگاتار ہو گر چہ رحم کے اندر ہو وہ حیض کا خون ہے اور اگر ایسا نہ ہو تو حیض نہیں ہے۔
ایک نیا سوال بھیجنے کے لیے یہاں کلک کریں
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français