مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

سوال و جواب » حیض

۱ سوال: اگر کوئی عورت ماہواری میں بھولے سے یا جان بوجھ کر اپنے شوہر سے ہم بستری کرے تو کیا حکم ہے؟
جواب: اگر جان بوجھ کر ایسا کیا ہے تو اسے توبہ کرنی چاہیے۔
۲ سوال: بعض عورتوں کو نس بندی کی وجہ سے حیض نہیں آتا، ایسی عورتیں طلاق کیلیے (مسالہ طہر غیر مواقع)کے پاک ہونے کو کیسے معلوم کریں گے اور ایسی عورتوں کی عدہ کا کیا حکم ہے؟
جواب: شوہر کو چاہیٔے کہ ۳ مہینہ ہمبستری کرنے سے پرہیز کرے اور پھر طلاق دے، اور عورت طلاق کے بعد ۳ مہینہ عدہ رکھے۔
۳ سوال: حیض میں قرآن و تفسیر پڑھنے یا قرآن حفظ کرنے کا کیا حکم ہے؟ جبکہ توضیح میں لکھا ہے کہ سات آیت سے زیادہ پڑھنا مکروہ ہے۔ کیا کراہت سے یہ مراد ہے کہ نہیں پڑھنا چاہیے؟
جواب: قرآن و تفسیر پڑھنے اور حفظ کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔
۴ سوال: اگر حائضہ عورت سات دن کے بعد پیلا پانی دیکھے تو کیا حکم ہے۔ اگر غسل کرے تو کیا اس سے نماز روزہ رکھ سکتی ہے اور اگر ہم بستری کرنے کےبعد پیلے پانی کو دیکھے تو کیا حکم ہے؟
جواب: وہ پانی جو عادت سے پھلے آتا ھے جب تک خون صادق نہ آيے پاک ھے حکم نھیں رکھتا اور عادت ختم ھوتے وقت اپنے کو چک کرتے وقت رويی پے جو پیلا خون آتا ہے جف تک دس دن سے گذر نہ جایے جزو عادت شمار ھوگا اور اگر دس دن سے زیادہ ہو اگر اسکو خون کہا جايے تو عادت کی مقدار حیض ہے اور باقی استحازہ ہے اور اگرخون نہ کہا جايے تو معلولی پانی کیطرح ہے حکم نہیں رکھتا۔
اور اگر دوسرا پانی خون کے علاوہ ہو پاک ہےاسکا عادت سے کويی ربط نہیں ہے گر چہ زرد ہو البتہ مطمين ہو کے یہ پانی عادت ماھیانہ کے علاوہ ہے۔
۵ سوال: میری بیٹی ساڑھے دس سال کی ہے جو ذہنی مریض ہے آبان ماہ (ایرانی کیلینڈر کا آٹھواں مہینہ) کے شروع میں اسے حیض آنا شروع ہوا ہے، میرا سوال یہ ہے کہ کیا خون بند ہونے کے بعد، چونکہ وہ ذہنی اعتبار سے کمزور ہے، میں اسے حمام کے وقت نیت اور غسل کرا سکتی ہوں یا نہیں، اگر کوئی اور راہ ہو تو رہنمائی کریں؟
جواب: اگر ان مسائل کو نہیں سمجھتی تو اس پر واجب نہیں ہے اور غسل کرنا بھی ضروری نہیں ہے اور اگر سمجھتی ہے تو اسے بتائیں کہ اسے حیض کا غسل کرنا چاہیے اور اتنا ہی کافی ہے، یہی نیت ہے اور نیت زبان پر لانا یا دل میں کرنا ضروری نہیں ہے۔
۶ سوال: آج تک کبھی ایسا نہیں ہوا تھا کہ مجھے دھبے نظر آئیں، میری ماہواری منظم تھی، اب جبکہ رمضان المبارک چل رہا ہے ہر مہینے کی طرح حیض آنا شروع ہوا ہے مگر کم اور حیض کی شکل میں بھی نہیں ہے جبکہ دن حیض والے ہیں ،میں روزانہ اذان سے پہلے غسل کرتی ہوں اور روزے رکھتی ہوں مگر دن میں مختصر سا خون آتا ہے۔ مجھے نہیں پتہ ان روزوں کا کیا حکم ہے؟
جواب: اگر حیض کا زمانہ ہو اور خون تین دن لگاتار آئے اگر چہ شروع میں باہر آئے اور بعد میں باہر نہ آے لیکن ایسا ہو کہ روئی لگانے سے بھیگ جاتی ہو تو وہ حیض حساب ہوگا اور اگر لگاتار نہ ہو تو حیض نہیں ہے بلکہ استحاضہ ہے۔
۷ سوال: کیا عورت حیض کے دوران عقد یا نکاح کر سکتی ہے؟
جواب: کوئی حرج نہیں ہے۔
۸ سوال: حیض میں پاک ہو جانے سے کیا مراد ہے؟
جواب: مراد یہ ہے کہ اندر بھی خون باقی نہ رہ جائے۔
۹ سوال: حیض کے دنوں کو کس طرح سے حساب کرنا چاہیے؟
جواب: حیض صادق آنے کیليےضروی ہے کہ خون باہر آيے اور تین دن پی در پی آيے گر چہ اندر ہو وگرنہ استحاضہ ہے یعنی اگر دن میں شروع ہو تو تیسرے دن اسی وقت تک(۷۲) گھنٹے استمرار ہونا چاہيے اور اگر رات میں ٓشروع ہو تیسری دن غروب تک مستمر ہو ۔
۱۰ سوال: اگر ظہر کی اذان کے بعد خون شروع ہو اور نماز پڑھ چکی ہوں تو کیا اس کی قضا بھی واجب ہے؟
جواب: قضا نہیں ہے۔
ایک نیا سوال بھیجنے کے لیے یہاں کلک کریں
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français