مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

سوال و جواب » درخت کاری

۱ سوال: کوئی شخص کسی زمین کو اس شرط پر دے کہ وہ اس میں درخت کاری کرے اور پھل آنے کی صورت میں دونوں اس میں شریک ہوں گے، کیا یہ صحیح ہے؟
جواب: اس طرح کے معاملات کو مغارسہ کہا جاتا ہے اور یہ جایز ہے اور بہتر یہ ہے کہ صلح کے طور پر معاملہ کیا جائے اس صورت میں زمین کا مالک کہے گا کہ میں تمہارے ساتھ صلح کرتا ہوں، تمہارے کام کے مقابلہ میں، فصل کی اتنی مقدار تمہاری ہوگی۔
۲ سوال: مشترک زمین پر اگر شرکاء میں سے کوئی ایک درخت لگاتا ہے تو وہ کس کی ملکیت ہوگی؟
جواب: وہ درخت لگانے والے کی ملکیت ہے لیکن اگر باقی شریک اسے اجازت نہ دیں تو اسے اپنے درخت وہاں سے اکھاڑنے پڑیں گے، اس صورت میں وہ انہیں اجرت لے کر بیچ بھی سکتا ہے۔
ایک نیا سوال بھیجنے کے لیے یہاں کلک کریں
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français