مرجع عالی قدر اقای سید علی حسینی سیستانی کے دفتر کی رسمی سائٹ

سوال و جواب » شئرز

۱ سوال: جناب سید محترم کی نظر میں اسٹاک مارکیٹ میں شیٔرز خرید و فروخت کا کیا حکم ہے؟
جواب: بسمہ تعالی، مختلف کمپنیوں وغیرہ کے شیئز کی خرید و فروخت کرنے میں کوئی حرج نہیں بشرطیکہ ہر معاملے میں شرعی قوانین کی مراعات کی جائے اور ان شرعی قوانین میں سے بعض یہ ہیں۔
۱ ایسی کمپنی یا بینک کے شیئرز خریدنے جایز نہیں کہ جو سودی معاملات کرتے ہوں اس طرح کہ یہ خریداری انکے سودی معاملات میں شراکت شمار ہوتی ہو۔
۲ جو کمپنی شراب وغیرہ کے معاملات کرتی ہو اسکے شیئرز کی خرید و فروخت جائز نہیں۔
۳ جائز نہیں کہ مبیع(بیچا جانے والا مال) اور ثمن(قیمت کے طور پر ادا کی جانے والی رقم یا مال) دونوں ہی عقد معاملہ سے پہلے نقدا موجود نہ ہوں، اور اسی طرح یہ بھی جائز نہیں کہ دونوں ہی معاملہ میں موئجل(ادھار) قرار پائیں،کیونکہ ادھار کو ادھار سے بیچنا صحیح نہیں۔
ایک نیا سوال بھیجنے کے لیے یہاں کلک کریں
العربية فارسی اردو English Azərbaycan Türkçe Français